Tue. Jun 25th, 2024
257 Views

ہٹیاں بالا(بیورورپورٹ)پی ٹی آئی اور عمران خان کا ساتھ نہ چھوڑنے پر وزیر تعلیم دیوان علی خان چغتائی کی آبائی یونین کونسل گوہر آباد سے منتخب چیئرپرسن کامران کنول کیانی کو چیئر پرسن یونین کونسل کے عہدہ سے ہٹانے کے لیے آٹھ میں سے پانچ ممبران یونین کونسل گوہر آباد کے دستخطوں سے چیئرمین ضلع کونسل جہلم ویلی طیب منظور کیانی کے پاس تحریک عدم اعتماد جمع کروا دی گئی۔تفصیلات کے مطابق دیوان چغتائی کی آبائی یونین کونسل گوہرآباد کی منتخب چیئرپرسن کامران کنول کیانی نے انوارلحق حکومت بننے کے بعد وزیر تعلیم دیوان چغتائی کا ساتھ دینے کے بجائے پی ٹی آئی اور عمران خان کی رہائی کے لیے جہدوجہد کی جس پر وزیر تعلیم دیوان چغتائی اور ان کے حامیوں نے ناراض ہو کر انکے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کروا دی،چیئرپرسن گوہر آباد کامران کنول کیانی نے اپنے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع ہونے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ منحرف فاروڈ بلاک کے ممبر قانون ساز اسمبلی دیوان چغتائی کے کزن اسد چغتائی نے سیاسی دباؤ ڈالتے ہوئے ممبرز لوکل کونسلرز کوعدم اعتماد کی تحریک پر مجبور کیا،مجھ پر فنڈز کی غلط تقسیم کا الزام لگایا جارہا ہے جو بے بنیاد ہے میں نے ممبران یونین کونسل، ممبر ضلع کونسل فیصل جاوید کی مشاورت سے فنڈز تقسیم کیے اسی جگہ سکیمیں اور فنڈز دیئے جن کا وعدہ دوران الیکشن وزیر تعلیم دیوان چغتائی نے کیا تھا،کامران کنول کیانی نے کہا ہے کہ ہم عمران خان کے نظریے کے ساتھ کھڑے تھے،ہیں اور ہمیشہ رہیں گے منحرف اراکین کی جانب سے پی ٹی آئی چھوڑنے اور عمران خان کے نظریہ سے انحراف کرنے کے حوالے سے دباؤ ڈالا گیا تاہم چیئرمین شپ سمیت تمام عہدے قیدی نمبر 804 کی جوتی پر قربان کرتی ہوں کسی دباؤ میں آکر منحرف رکن اسمبلی کا ساتھ نہیں دے سکتی عمران خان اور پی ٹی آئی کے نظریہ پر زندگی کی آخری سانسوں تک قائم رہوں گی عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوئی ہوں عوام کی ہی بات کروں گی عوام کے ووٹ کی توہین کبھی نہیں کر سکتی اور نہ ہی کسی کا ایجنٹ بن کر سیاست کروں گی۔۔۔

By ajazmir