Wed. May 12th, 2021
339 Views

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تحریر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔بابر بشیر۔۔
دنیامیں مال و دولت کی ھوس اور جاگیر دارنہ نظام نے غریبوں کی زندگی کی ساری خو شیاں کشید کر لی ہیں وہ محنت کش طبقہ جو اپنے خون سے اشرافیہ کو را حت و آرام پہنچاتا ہے خود ھر شے کو ترستا ھے ۔
اپنے حقوق کو پانے کے لیے 1886 میں محنت کشوں نے احتجاج کیا اور اس کی پاداش میں ھزاروں نے اپنی جانوں کو قربان کیا آن ہی با حوصلہ جانسارون کی یاد میں یکم مئی ھر سا ل یوم مزدوروں کے طور پر منایا جاتا ہے۔ انتہائی مختصر آج کے دور میں بھی حقیقت یہ ہے کہ بندہ مزدور کے اوقات بہت تلخ ہیں اور اس پہ ستم یہ کہ معاوضہ اور مراعات وہ نہیں جو ان کی محنت کا بدل ہوسکیں
آج یکم مئی 20 20 اسلے بھی اھمیت کا حامل ہو گیا ہے کہ پچھلے ایک ڈھیر ماہ سے ملک بھر میں لاک ڈاون ہے جس کی وجہ سے دہیاڑئ دار طبقہ جو کہ مزدور کی تہریف میں آتا ہے انتہائی نا مساعد حالات کا شکار ہے سو مزدورں کے عالمی دن اور کورونا واہرس کے اس سماجی فاصلوں کے دور میں ۔ھماری حکومتوں اور پالیسی ساز آدارےکو چاہیے کہ وہ آن کی یومیہ اجرت میں آضافہ کریں ۔ آج کے دن آن مزدوروں کو ضرور یاد کریں جھنوں نے اپنی جدوجہد سے آنے والوں کو راستہ دکھایا آہیے ھم اور آپ بھی اپنے حصے کا دیپ جلاتے جائیں شاہد یہ دیپ کسی محنت کش کی سیاہ رات میں سوہیرا بن جاے ۔۔۔

Avatar

By ajazmir