Tue. Jun 22nd, 2021
240 Views

لائن آف کنٹرول پر کشیدگی کے باعث معطل ہونے والی تیتری نوٹ چکاں دا باغ انٹرا کشمیر تجارت تیسرے روز بھی معطل رہی بھارتی حکام نے جمعہ کے روز بھی دو طرفہ تجارت بحال کرنے سے انکار کر دیا لائن آف کنٹرول کراس کرنے لیے کھڑے سینکڑوں مال بردار ٹرکوں میں لوڈ مال خراب ہونے اور تاجروں کو کرڑوروں روپے نقصان کا خطرہ۔تفصیلات کے مطابق منگل کے روز لائن آف کنٹرول پر گولہ باری کے بعد تیتری نوٹ چکاں دا باغ کراسنگ پوائنٹ سے ہونے والی دو طرفہ تجارت کو معطل کر دیا گیا تھا جو تیسرے روز بھی معطل رہی مقبوضہ کشمیر کی انتظامیہ نے آج جمعہ کے روز بھی دو طرفہ تجارت تیتری نوٹ ،چکاں دا باغ کراسنگ پوائنٹ سے بحال کرنے سے انکار کر دیا ہے تجارت کی مسلسل معطلی کے باعث لائن آف کنٹرول کراس کرنے کے انتظار میں کھڑے سینکڑوں مال بردار ٹرکوں میں لوڈ مال خراب ہونے سے دونوں اطراف کے تاجروں کو کرڑوروں روپے مالیت کے نقصان کا خطرہ ہے دوسری طرف اٹھائیس روز گذرنے کے بعد بھی بھارتی فوج کی جانب سے لائن آف کنٹرول کو اوڑی چکوٹھی کراسنگ پوائنٹ سے ملانے والے امن برج کی عدم مرمتی کے باعث سرینگر مظفرآباد تجارت بھی مسلسل معطل ہے یاد رہے کہ آٹھ مارچ کے روز بھارتی فوج نے یہ کہہ کر امن برج کے گیٹ کھولنے سے انکار کر دیا تھا کہ پل ٹرکوں کا لوڈ برداشت نہ کر سکنے کے باعث جزوی طور پر ٹوٹ چکا ہے اسکی مرمتی کے لیے پندرہ دن درکار ہیں پندرہ کے بجائے اٹھائیس روز گذرنے کے باوجود بھی بھارتی فوج امن برج کی مرمتی مکمل نہ کروا سکی جس کے باعث آر پار سرینگر مظفرآباد بس اور ٹرک سروس مسلسل معطل ہونے کے باعث تاجر اور مسافر شدید پریشانی اور مشکلات سے دو چار ہیں تاجروں کی جانب سے بار بار امن برج کی فوری مرمتی کے مطالبے کو بھی ردی کی ٹوکری میں ڈالتے ہوئے کام کو سست روی سے جاری رکھا گیا ہے

Avatar

By ajazmir