Wed. Jun 26th, 2024
355 Views

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کے درمیان 8 فروری 2024 کو پاکستان میں عام انتخابات کرانے پر اتفاق ہوگیا۔
الیکشن کمیشن کی جانب  سے جاری بیان کے مطابق  صدر مملکت اور  چیف الیکشن کمشنر کے درمیان  عام انتخابات 8 فروری 2024 ء کو کرانے پر اتفاق ہوا ہے ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق عام انتخابات جمعرات 8 فروری کو کرانےکا فیصلہ ہوا ہے ایوان صدر کی جانب سے بھی اس حوالے سے اعلامیہ جاری کردیا گیا ہےالیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابات کی حتمی تاریخ سےسپریم کورٹ کو آگاہ کیا جائے گا۔خیال رہےکہ جمعرات کے روز ملک میں 90  روز  میں انتخابات سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران الیکشن کمیشن کے وکیل سپریم کورٹ میں پیش ہوئے  اور  بتایا کہ الیکشن کمیشن 11 فروری 2024 کو  ملک میں الیکشن کروانے کے لیے تیار ہےعدالت نے الیکشن کمیشن کو حکم دیا کہ صدر مملکت سے آج ہی مشاورت کر کے جمعہ کوعدالت میں الیکشن کی تاریخ سے متعلق آگاہ کیا جائےسپریم کورٹ کے حکم پر صدر عارف علوی سے چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ اور اٹارنی جنرل منصور عثمان نے ملاقات کی جس میں الیکشن کمیشن کے ارکان بھی موجود تھے۔جیو نیوز کے مطابق صدر سے چیف الیکشن کمشنر اور اٹارنی جنرل کی ملاقات ایک گھنٹے سے زائد جاری رہی جس میں عام انتخابات کے لیے صدر مملکت کے سامنے 3 تاریخیں رکھی گئیں الیکشن کمیشن نے 28 جنوری ، 4 فروری اور 11 فروری کی تاریخوں پر رائے دی، تاہم الیکشن کمیشن کی جانب سے 11 فروری کو انتخابات کے لیے موزوں قرار دیا گیا الیکشن کمیشن نے کہا کہ سپریم کورٹ کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے 11 فروری کو عام انتخابات کی تاریخ تجویز کرتے ہیں ذرائع کا کہنا  تھا کہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کے درمیان ملاقات میں الیکشن کی تاریخ پر اتفاق نہ ہوسکا جس کے بعد  اٹارنی جنرل صدر مملکت کا پیغام لے کر  چیف الیکشن کمشنر کے پاس گئے اور  صدر مملکت کا مؤقف چیف الیکشن کمشنر کے سامنے رکھا۔انتخابات کی تاریخ  کے لیے صدر اور الیکشن کمیشن حکام کے درمیان مشاورت کی اندرونی کہانی بھی سامنے آگئی ہے۔ذرائع کے مطابق اتفاق رائے نہ ہونے پر درمیانی تاریخ کی تجویزدی گئی جس پر اتفاق کیاگیا، صدر نے سپریم کورٹ کے فیصلےکی روشنی میں 4 فروری 2024 کی تجویز دی تھی، صدر مملکت 4 فروری اور الیکشن کمیشن 11 فروری کو انتخابات کرانے پر بضد تھا، اتفاق رائے نہ ہونے پر الیکشن کمیشن حکام ایوان صدر سے واپس آ گئے۔ اس کے بعد  اٹارنی جنرل بیچ کی راہ کی نکالنے کے لیے ایوان صدر سے الیکشن کمیشن پہنچے، اٹارنی جنرل الیکشن کمیشن حکام سے ملاقات کے بعد واپس ایوان صدر گئے، صدر مملکت سےدوبارہ مشاورت کے بعدعام انتخابات کے لیے 8 فروری کی تاریخ پر اتفاق ہوا

By ajazmir