Tue. Jun 25th, 2024
797 Views

ہٹیاں بالا() دی سمارٹ سکول ہٹیاں بالا کیمپس میں سالانہ نتائج و یوم والدین پر عظیم الشان شاندار تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں بچوں نے رنگا رنگ پروگرامات پیش کر کے ناظرین کو ورطہ حیرت میں ڈال دیا۔ پروقار وعظیم الشان تقریب کے مہمان خصوصی ڈپٹی کمشنر جہلم ویلی سید فدا حسین کاظمی تھے جبکہ صدارت ایم ڈی ادارہ ڈاکٹر قاضی ذوالفقار علی اعوان نے کی تقریب کے مہمان خاص مبشر حفیظ، ایس پی جہلم ویلی خرم اقبال، صائمہ نزیر عباسی پرنسپل ہائر سکینڈری سکول کھلانہ، طاہرہ جبین پرنسپل ہائر سکینڈری سکول لنگرپورہ، ریٹائر پرنسپل راجہ شوکت علی خان، سید نور محمد شاہ، منیر خان ڈی ایس پی جہلم ویلی، سید مختار گیلانی، ڈاکٹر ارشد خان کے علاؤہ علاقے کے معززین اور طلبہ کے والدین کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پر بچوں نے رنگا رنگ ٹیبلو، قومی ترانے، نغمے، خاکے و دیگر آئیٹم پیش کر کے حاضرین کے دل جیت لیئے اس موقع پر مختلف ٹیبلو پیش کیےگےاور ساتھ سلیبس کے مطابق ہر کلاس کے بچوں نے عملی طور پر پراجیکٹ پیش کیئے جس پر خوب داد دی گئی۔ کراٹوں کا عملی مظاہرہ کرکے بچوں نے سب کی توجہ اور داد حاصل کی۔
تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر سید فدا حسین کاظمی، ایس پی جہلم ویلی خرم اقبال ، ایم ڈی ادارہ ڈاکٹرذوالفقار علی قاضی ، پروفیسر راجہ شوکت علی خان، سید نور محمد، طاہرہ جبین پرنسپل ہائر سکینڈری سکول لنگرپورہ، صائمہ نذیر عباسی پرنسپل ہائر سکینڈری سکول کھلانہ، ارم بی بی، سجاد عباسی و دیگر نے کہا کہ دی سمارٹ سکول ہٹیاں بالا کیمپس نے ہٹیاں بالا میں کیمپس قائم کر کے احسان عظیم کیا۔ ہٹیاں بالا ایک نوزائیدہ ضلع ہے اور اس کو اس طرح کے اداروں کی اشدضرورت تھی مگر مسائل اور وسائل نہ ہونے سے ایسے انٹرنیشنل ادارے قائم کرنا کافی مشکل کام ہے، مگر ہٹیاں بالا کے سپوت ڈاکٹر ذوالفقار علی قاضی نے یہ ادارہ قائم کر کے ضلع ہٹیاں بالا کو مظفرآباد اور اسلام آباد جیسے تعلیمی ادارے کے برابر لاکھڑا کردیا اب ہٹیاں بالا کا بچہ بھی مظفرآباد اور اسلام آباد کے بچے کا مقابلہ کر رہا ہے سمارٹ سکول ہٹیاں بالا میں وہ تعلیمی ماحول موجود ہے جو کہ بڑے بڑے تعلیمی اداروں میں نہیں، دی سمارٹ سکول میں سمارٹ بورڈ فلیسکی ماسٹر، اورجدید تعلیم کے مطابق عملی کام کے حوالہ سے جملہ مٹریل اور انٹرنیشنل لیول کی لیبز کا موجود ہونا قابل زکر ہے۔ تعلیم انبیاء کی میراث ہے دنیا میں وہی قوموں نے ترقی کی جو تعلیم کے زیور سے آراستہ ہوئے، دنیاوی تعلیم کے ساتھ ساتھ دینی تعلیم کا ہونا بھی اشد ضروری ہے۔ دی سمارٹ سکول میں اس جانب بھی خصوصی توجہ دی جاتی ہے اور قرآن حفظ کا باقاعدہ نظام قائم ہے وہ قابل ستائش ہے اس مو قع پر تعلیم کی اہمیت پر سب نے دل کھول کر بات کی مقریرین نے ماضی کا اور موجودہ تعلیم ماحول اور اس میں موجود نقائص پر بھی بات کی اور اس بات پر زور دیا کہ جو قومیں اپنی استازہ کی قدر کرتی ہیں وہ ھر دور میں دنیا پر حکمران رہی ہیں اور جنہوں نے استاز کی قدر نہیں کی وہ محکوم ہی رہی ہیں اس موقع پر ایم ڈی ادارہ ڈاکٹر قاضی ذوالفقار علی خان نے کہا کہ پیسہ کمانا میرا مقصد نہیں ہٹیاں بالا میرا گھر ہے اس کی خدمت کرنا مجھ پر فرض تھا اللہ نے بہت کچھ دیا ہے عوام خدمت میری اولین ترجیح ہے۔ 30 سال سے ملک میں سوشل سیکٹر میں خدمت سر انجام دے رہا ہوں جس میں تعلیم سب سے اہم ہے۔ ہٹیاں بالا کی عوام میرا یہ قرض تھا جسے چکانے کی کوشش کی یہ ادارہ عوام کا ادارہ ہے میرا نہیں، عوام اس ادارہ کی بہتری کے لیئے مثبت تنقید بھی کری مگر حوصلہ شکنی نہ کی جائے عوام کے تعاون سے ہی انٹرنیشنل معیار کے سکول کو چلایا جاسکتا ہے عوامی تعاون کے بٖغیر یہ ممکن نہیں ہے۔
آخر میں رزلٹ اناؤنس کیا گیا ادارے کا رزلٹ 100 فیصد رہا پوزیشن ہولڈر بچوں میں انعامات و شیلڈز تقسیم کی گئی اس موقع پر استحکام پاکستان، مسلح افواج پاکستان، تحریک آزادی کشمیر اورشہداء پاکستان وکشمیر کے لیئے خصوصی دعا کی گئی ۔۔۔۔۔

By ajazmir