Wed. Feb 8th, 2023
287 Views

ضلع جہلم ویلی میں بلدیاتی انتخابات کی سرگرمیاں

تحریر ۔محمد اسلم مرزا

آزاد کشمیر الیکشن کمیشن کے مطابق بلدیاتی انتخابات 27 نومبر کو منعقد ہوں گے۔انتخابی شیڈول کے مطابق امیدواروں کے کاغذات نامزدگی 14 تا 24 اکتوبر 2022ء تک ریٹرننگ آفیسران کے پاس جمع ہوچکے جب کہ ریٹرننگ آفسیران نے 25 کو سکرونٹی کا پراسس بھی مکمل کر لیاہے ابھی تک ضلع جہلم ویلی کی تین تحصیلوں اور دو میونسپل کمیٹوں میں امیدوران کےکاغذات کی درسگی اور مسترد کیے کاغذات کی فہرستیں آر اوز کے دفاتر کے باہر آویزاں کی جاچکی ہیں ۔تحصیل چکار کی دو یونین کونسلوں اور ایک میونسپل کمیٹی سے کل 104 امیدوران نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں آر او چکار خرم نظیر عباسی ہیں جب کہ تحصیل لیپا کی تین یونین کونسلوں سے 108امیدواران نے کاغذات جمع کرائے وارڈز سے 82 جب کی یونین کونسل ہا سے 26 امیدوران نے کاغذات جمع کرائے ریٹرنگ آفیسر چوہدری امجد حسین ہیں کسی ایک امیدوار کے کاغذات مسترد نہیں ہوئے۔یونین کونسل ہٹیاں بالا کی 18یونین کونسلوں اور ایک میونسپل کمیٹی کے دو ریٹرنگ آفیسران جن میں سیدہ مہوش کاظمی یونین کونسل 1 تا 7 بشمول میونسپل کمیٹی سے 298 امیدوران نے کاغذات نامزدگی جمع کرائےجب کہ یونین کونسل 8تا 17 کےلیے ریٹرنگ آفیسر ایاز بشیر شیخ نے 199 امیدوارن کے کاغذات وصول کیے سیدہ مہوش کاظمی نے چھ امیدواران کے کاغذات مسترد کیے جب ایاز بشیر شیخ نے پانچ امیدواران کے کاغذات مسترد کیے جن کو 28اکتوبر سے قبل ایپل کرنے کا حق حاصل ہے 28 اکتوبر کو ڈسٹرکٹ ریٹرنگ آفیسر راجہ اطہر علی خان نے اپیلوں کی سماعت کریں گئے۔29اکتوبر تک امیدوران کاغذات واپس لےسکتے ہیں نامزد امیدواروں کی فہرست 29 اکتوبر کو فائنل امیدوران کی فہرست آویزاں کردی جائے گی۔31اکتوبر کا انتخابی نشانات الاٹ کردیے جائیں گئے

الیکشن کمیشن آزاد کشمیر کے مطابق 27 نومبر کوبلدیاتی انتخابات کے لیے پولنگ کا انعقاد کیا جائے گا اور پورے آزاد کشمیر میں ایک ہی دن پولنگ ہوگی۔ اس وقت تک حلقہ سات سے حکومتی جماعت پاکستان تحریک انصاف کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ایک یونین کونسل سے درجنوں امیدوار ٹکٹ کے امیدوار ہیں جن کو ٹکٹ نہ ملا تو یقینآ وہ ہاکستان تحریک انصاف کے لیے مشکلات پیدا کرسکتے ہیں ویسے تو چیئرمین پاکستان تحریک انصاف ضلع جہلم ویلی دیوان علی چغتائی وزیرتعلیم وٹیوٹا نے امیدواران کو ٹکٹ جاری کرنے سے قبل حلف لیا ہے وہ پارٹی ڈسپلن کی پابندی کریں گئے اس وقت تک حلقہ سات میں پاکستان تحریک انصاف کا مقابلہ ن لیگ سے ہے پیپلزپارٹی کا متعدد یونین کونسلوں سے امیدوار نہیں ملےاور دس یونین کونسلوں میں پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کا انیس بیس کا مقابلہ ہے جب ایل اے بتیس حلقہ چھ سے مسلم لیگ ن کامقابلہ پیپلزپارٹی سے ہے یہاں پی ٹی آئی کی پوزیشن بہت کمزور ہے پی ڈی ایم بننے کی صورت میں پاکستان تحریک انصاف کا صفایا ہوجائے گا اس وقت سینکڑوں آزاد امیدوار میدان میں ہیں اور بڑے بڑے اپ سیٹ کرنے کی قوت رکھتے ہیں پارٹی ٹکٹ سے ہٹ کر لڑنے والوں کا موقف ہے بلدیاتی الیکشن میں پارٹی کی پوزیشن محدود ہوجاتی ہے وارڈز اور یوسیز میں قرابت داری زیادہ ہونے کی وجہ سے آزاد امیدواران کامیابی کے دعوے کر رہے ہیں۔خوش آئند بات یہ کہ لوگوں میں جوش وخروش پایا جاتا ہے اور بڑھ چڑھ کر سیاست میں حصہ لے رہے ہیں ۔یاد رہے کہ 27نومبر کو ضلع جہلم ویلی کے متعدد علاقہ جات برف باری میں ڈوبے ہوں گئے جن میں لیپا ریشیاں۔نلئی گندی گراں۔کھلانہ۔پانڈو۔نڑدجیاں۔چھم ۔چکار کے علاقے شامل ہیں جہاں نومبر کے پہلے ہفتے برف باری کا آغاز ہوجاتا ہے اس موسم میں ٹرن آوٹ انتہائی کم رہے گا۔جب کہ برادری اورخاندانی چپقلش کی وجہ سے غالب اکثریت نے پولنگ اسٹیشنوں پر نہ جانے کا اعلان کیا ہے کیوں کہ وہ کسی سے تعلق خراب نہیں کرنا چاہتے ہیں۔بلدیاتی انتخابات میں اہل اور تعلیم یافتہ افراد ایک بار پھرتماشائی دیکھائی دیے ہیں درمیانے طبقے کے لوگ اچھل کود میں مصروف ہیں

By ajazmir