Wed. Feb 8th, 2023
234 Views

ہٹیاں بالا(بیورورپورٹ)آزاد کشمیر کے ضلع جہلم ویلی کے علاقوں ہٹیاں بالا ،چناری ،چکوٹھی ،چکار ،وادی لیپاء،گوجربانڈی اور گردونواح کے اکثر پرائیویٹ اور سرکاری تعلیمی اداروں میں لاکھوں روپے کی آمدن اور فنڈز ہونے کے باوجود سی سی ٹی وی کیمروں کی عدم تنصیب طلباءاور طالبات کی سیکورٹی صفر والدین کا شدید تحفظات کا اظہار وزیر تعلیم ،چیف سیکرٹری سے نوٹس لینے اور ضلع جہلم ویلی بھر کے تمام تعلیمی اداروں اور مدارس کو مکمل طور پر سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب کو یقینی بنانے کا مطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق ہٹیاں بالا ،چناری ،چکوٹھی ،چکار ،وادی لیپاء،گوجربانڈی اور گردونواح کے اکثر تعلیمی اداروں اور مدارس میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب نہ ہونے کے باعث طلباءاور طالبات عدم تحفظ کا شکار والدین میں بھی شدید تشویش میں مبتلا ہیں ضلع بھر کے اکثر تعلیمی اداروں میں کون گیا کون آیا کسی کے پاس کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہےمختلف علاقوں میں سکول اوقات میں لوفر لڑکوں کی بھی سکولوں کے باہر چوک ،چوہراﺅں میں کھڑے ہونے اور طالبات کو تنگ کرنے کی متعدد شکایات سامنے آچکی ہیں لیکن ضلع جہلم ویلی کی انتظامیہ ،محکمہ تعلیم ،پرائیویٹ سکولز کے ذمہ داران نے خاموش تماشائی کا کردار ادا کرتے ہوئے طلباءاور طالبات کو حالات کے رحم وکرم پر چھوڑ دیا ہے جہلم ویلی میں درجنوں ایسے پرائیویٹ تعلیمی ادارے موجود ہیں جن کی ماہانہ آمدن لاکھوں روپے ہے اور سرکاری تعلیمی ادارے جن کے اکاﺅنٹس میں لاکھوں روپے فنڈز موجود ہیں جان بوجھ کر سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب نہیں کر رہے اور نہ ہی انھیں آج تک کسی نے باز پرس کی ہے اگر انتظامیہ نے ذمہ داری کا مظاہرہ نہ کیا تو کسی بھی وقت کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما ہونے کا خطرہ ہے عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ اگر بچوں کو مکمل سیکورٹی فراہم نہ کی گئی،سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب یقینی نہ بنائی گئی تو اگر کوئی واقعہ رونما ہو گیا تو اس کی تمام تر ذمہ داری ڈپٹی کمشنر ہٹیاں بالا پر عائد ہو گی ۔۔

By ajazmir