Mon. Dec 6th, 2021
526 Views

پاکستان پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے مرکزی نائب صدر،سابق چیئرمین معائینہ و عملدرآمد کمشن صاحبزادہ محمد اشفاق ظفر نے کہا ہے کہ سابق وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر اپنے پانچ سالہ دور حکومت میں پیپلز پارٹی کے کارکنان کو بدترین انتقامی کارروائی کا نشانہ بناتے رہے ان کا دور حکومت سرحد کے اس پار کی حکومتوں سے بھی بدترین دور تھا۔ان خیالات کا اظہار پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے رہنماء صاحبزادہ محمد اشفاق ظفر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انھوں نے کہا کہ فاروق حیدر کو پیپلز پارٹی کے کارکنان کی فکر کی ضرورت نہیں ہے اگر پی ٹی آئی کی حکومت نے پیپلز پارٹی کے کارکنان کو انتقام کا نشانہ بنایا تو ہم اللہ کے فضل وکرم سے اس کا مقابلہ کرنا بخوبی جانتے ہیں فاروق حیدر نے اپنے دور حکومت میں جعلی،فرضی مقدمات کے زریعے پیپلز پارٹی کے کارکنان کو انتقام کا نشانہ بنانے کے علاوہ لوٹ گھسوٹ مچائے رکھی اگر پی ٹی آئی کی حکومت عوام کی خیر خواہ ہے اور بھلائی کرنا چاہتی ہے تو اسے چاہیے وہ سابقہ حکومتوں کا کڑا احتساب شروع کرے اشفاق ظفر نے کہا کہ فاروق حیدر اپنی جماعت اور کارکنان کی فکر کریں پیپلز پارٹی کی اب مفاہمت کی سیاست مر چکی ہے کسی نے اگر فاروق حیدر سے مفاہمت کی ہو گی تو یہ اس کا ذاتی فیصلہ ہو گا پیپلز پارٹی کا اس فیصلہ سے کوئی تعلق نہیں ہے آج بھی فاروق حیدر کے عزیز پیپلز پارٹی کے کارکنوں پر ظلم کرنے والوں کو پناہ دے رہے ہیں تھانہ چکار کی پولیس فاروق حیدر کی لونڈی بن چکی ہے تھانہ چکار میں آج بھی ظلم ،جبر اور نہ انصافی کا بازار گرم ہے تھانہ چکار میں پہلے تو کسی مظلوم کی درخواست پر ایف آئی آر درج نہیں ہوتی اگر ایف آئی آر درج بھی ہو جائے تو تھانہ پولیس چکار ملزمان کو تحفظ فراہم کرنا شروع کر دیتی ہے چکار کے نواحی علاقہ اندرا سیری میں دو واقعات رونما ہوئے معصوم بچی کے ساتھ جنسی زیادتی کے ملزمان کو گرفتار نہیں کیا گیا ملزمان سرعام مہاراج کی پشت پناہی کے باعث بازاروں میں گھوم رہے ہیں چکار میں لاقانونیت کا دور دورہ ہے کوئی پوچھنے والا نہیں ہے آئی جی آزاد کشمیر کو تھانہ چکار کو مکمل طور پر ختم کر دینا چاہیے جہاں پر پولیس آج بھی فاروق حیدر کے کارکن کے طور پر کام کررہی ہے

By ajazmir