Tue. Sep 21st, 2021
408 Views

پاکستان پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے مرکزی نائب صدر،نامزد امیدوار اسمبلی حلقہ چھ ،جہلم ویلی صاحبزادہ محمد اشفاق ظفر ایڈووکیٹ کا وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی آبائی یونین کونسل سلمیہ میں بڑا وار درجنوں ن لیگی کارکنان اپنے سینکڑوں ساتھیوں سمیت ن لیگ سے مستعفی ہو کر پیپلز پارٹی میں شامل ہو گئے یونین کونسل سلمیہ کی فضا جیے بھٹو،جیے بے نظیر،جیے بلاول ،جیے لطیف،جیے ظفر کے نعروں سے گونج اٹھی

گاﺅں کوپرا اندرا سیری میں چیئر مین محمد نسیم ، ستناڑہ کوٹ گجراں میںحاجی اکبر دین،چوہدری قاسم اور چوہدری قطب دین کی رہائش گاہوں پر منعقدہ کارنرز میٹنگز میں مسلم لیگ نواز کے دیرینہ کارکن اور وزیر اعظم کے قریبی ساتھی چوہدری عبدالغفور کا پورا خاندان جن میں چودھری اورنگزیب ، چوہدری عرفان ، چوہدری اظہر ، چوہدری عباس ،چوہدری شہزاد ،چوہدری حفیظ انور،چوہدری انور ، چوہدری احمد حسین، دلدار حسین ،چوہدری فیض عالم ،چوہدری انصار عزیز چوہدری قاسم کی قیادت میں جبکہ راجہ سکندر حسین ،چوہدری سرور ، وقار سرور،چوہدری اشرف،چوہدری قطب دین،چوہدری محبوب،چوہدری طارق محمود،چوہدری ساجد محمود،چوہدری بشارت محمود،چوہدری مفسر،چوہدری نزاکت،چوہدری صدیق اور چوہدری گلزار اپنے ساتھیوں اور خاندان سمیت مسلم لیگ سے مستعفی ہو کر پیپلز پارٹی میں شامل ہو گئے اس دوران امیدوار اسمبلی کے ہمراہ ضلعی صدر راجہ پرویز اقبال، حافظ راجہ طارق محمود، راجہ نذیر خان، راجہ افتخار، راجہ سرفراز، محمد عمران کالس ، صاحبزادہ افضال رحیم، زاہد بشیر، چوہدری راشد ، چوہدری تحسین ، فکردین ،قاری اخلاق ، اور دیگر بھی تھے شمولیتی پروگرامز سے خطاب کرتے ہوئے صاحبزادہ اشفاق ظفر نے کہا کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کے مظفرآباد محل کی دیواریں توڑی جائیں تو تجوریاں ہی تجوریاں نکلیں گی جن میں سے پانچ سالہ کرپشن اور لوٹ مار کی رقم برآمد نہ ہوئی تو عوام میرا گلہ دبادینا میرا قتل معاف ہو گایہ اقتدار کے پجاری چند دنوں میں ان تجوریوں کو کھول کر حلقہ میں ضمیر خریدنے کے لیے آئیں گے ان سے پیسے لے لیں لیکن انھیں ووٹ نہیں دینا ہے فاروق حیدر نے پانچ سال عوام کو گالیاں ،دھکے دیے اور پولیس سے ڈنڈے برسائے جس کا بدلہ25جولائی کے روز تیر کے نشان پر مہر لگا کر لیا جائے اللہ تعالی نے حلقہ چھ کے عوام کے ووٹ کی پرچی کے زریعے فاروق حیدر کی شکست عرش پر لکھ دی ہے پچیس جولائی کے روز رسمی کارروائی ہو گی جب میرے والد محترم الیکشن لرتے تھے تب بھی جو لوگ ہمارے ساتھ نہیں آئے آج وہ میرے ساتھ پیپلز پارٹی میں شامل ہو رہے ہیں یہ حلقہ چھ میں فاروق حیدر کی شکست کی واضع مثال ہے نئے شامل ہونے والوں کے اعتماد کو کبھی ٹھیس نہیں پہنچاﺅں گامیں کبھی ایسا نہیں کروں گا کہ جب میں آئندہ پھر عوام کے پاس ووٹ کے لیے آﺅں تو میری آنکھیں شرم سے جھکی ہوئی ہوںاللہ کے فضل و کرم اور عوامی قوت سے کامیاب ہونے کے بعد سب سے آنکھ سے آنکھ ملا کر بات کروں گاحلقہ کے عوام سے کیے گئے تمام وعدے پورے کروں گا اس کے بعد ووٹ مانگھنے آﺅں گایونین کونسل سلمیہ کی تعمیر و ترقی دیکھ کر ثابت ہوتا ہے واقعی وزیراعظم نااہل ترین وزیراعظم رہے ہیںفاروق حیدر تو کہتے تھے میں وزیراعظم ہوں ہر گھر میں ووٹ مانگھنے نہیں جا سکتا ہوں اب کیوں ووٹوں کے لیے منتیں ترلے کر رہے ہیں کل تک گولڈ لیف سگریٹ مانگھ کر پینے والے فاروق حیدر آج عالی شان محل،پلازے اور بڑے بزنس کے مالک بن گئے ہیںاشفاق ظفر نے کہا کہ فاروق حیدر درست کہتے ہیں انھوں نے ضلع جہلم ویلی میں دس ارب روپے دیے ہوں گے لیکن وہ عوام کی فلاح و بہبود کے بجائے فاروق حیدر کے چمچوں کی جیبوں میں گئے ہیںانھوں نے کہا کہ راجپوت خاندان کے غریب لوگوں کے بچوں کو اس لیے نوکریاں نہیں دی گئیں ان کے پاس وزیراعظم کے فرزند کو رشوت دینے کے لیے پیسے نہیں تھے اگر ان کے پاس بھی تین سے پانچ لاکھ ہوتے وہ بھی سرکاری ملازمت حاصل کر سکتے تھے2016ءمیں عوام نے فاروق حیدر کو وزیراعظم بننے کے لیے ووٹ دیے ان کے فرزند نے ووٹروں کے ووٹ کی توہین کرتے ہوئے تقرریوں،تبادلوں پر بھی پیسے وصول کیے اور پانچ سال تک باپ بیٹا فون بند کر کے عوام کی تذلیل کرتے رہے

Avatar

By ajazmir