Thu. Apr 15th, 2021
280 Views

ضلع جہلم ویلی کے علاقے شاریاں میں خاتون کو قتل کرنے کے بعد واقعہ قتل کو خود کشی قرار دے کر معاملہ کو دبا دیا گیا اور کہا گیا کہ خاتون کا ذہنی توازن کھو چکا تھا خاتون نے از خود پانی کی ٹینکی میں اپنے آپ کو ڈال کر اپنی زندگی کا خاتمہ کیا عوام اور ورثا نے خاتون کا قتل اندھا قرار دے کر معاملہ کو گول کر دیا خاتون کی میت کو دو دن کے بعد نماز جنازہ ادا کر کے دفن کر دیا اور ساتھ ہی قبر بھی پختہ کر دی گی جسکی خفیہ تحقیقات پولیس نے جاری رکھی اندھا قتل کے سراغ ملتے ہی پولیس نے قبر کشائی کرائی اور لاش کا پوسٹمارٹم کرایا گیا میڈیکل رپورٹ آنے پر قتل بر آمد کرا کیا گیا خاتون کا شوہر قاتل نکلا اور دیور معاونت میں پایا گیا قتل کے ملزمان نے اقبال جرم کر لیا ملزمان کے خلاف قتل کا مقدمہ درج۔ تفصیلات کے مطابق جہلم ویلی کے گاﺅں شاریاں کے چوہدری نزر دین نے چار مارچ کو اپنی منکوحہ کو قتل کر کے لاش اپنے بھائی کی معاونت سے پانی کی ٹینک میں ڈال دی اور علاقہ میں بیوی کی تلاش جاری رکھی عوام علاقہ کو بتایا گیا کہ اس کی بیوی ذہنی توازن کھو چکی تھی اور وہ گھر سے غائب ہے دو دن کے بعد ایک خاتون پانی کی ٹینکی سے پانی بھرنے کے لیے آئی تو خاتون کو پانی کی ٹینکی میں لاش دکھائی دی جس کی اطلاع اہل خانہ کو دی گی اور لوگ اکھٹے ہو گے خاتون کی لاش ٹینکی سے نکال کر قتل کو خود کشی قرار دے کر لاش کو دفنا دیا گیا اور قبر فورا ہی پختہ کر دی گی جس پر شکوک و شہبات نے جنم لیا ڈسٹرکٹ پریس کلب ہٹیاں بالا کے صحافیوں نے اس واقعہ کو اوپن کیا تو پولیس نے تحقیقات شروع کر دی پولیس نے خفیہ تحقیقات مکمل کرنے کے بعد قبر کھودائی کر کے لاش کو باہر نکالااور لاش کا پوسٹ مارٹم کرایا میڈیکل رپورٹ آنے پر اندھا قرار دیے جانے والا قتل برآمد ہو گیا خاتون کا شوہر قاتل نکلا اور دیور معاونت کا مرتکب پایا گیا ایس پی جہلم ویلی ہٹیاں بالا سردار ریاض مغل نے پریس بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ قاتلوں نے اقبال جرم کر لیا ہے اور قاتلوں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کر کے قاتلوں کو سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا ہے اس قتل کو منظر عام پر لانے کے لیے انتہائی شفاف تحقیقات کرائی گی اور کسی بھی سیاسی دباﺅ کو خاطر میں نہیں لایا گیا پہلے دن سے ہی معاملہ مشکوک پایا گیا قاتل انتہائی سفاک انسان ہے اس نے جس بے دردی سے اپنی بیوی کو قتل کیا اور انتہائی مہارت سے مقتولہ کی لاش کو ٹھکانے لگایا اس کی مثال نہیں ملتی صحافیوں نے اندھے قتل کو برآمد کرانے کے لیے اپنا کردار ادا کیا اور ان کی رپورٹ درست ثابت ہوئی جس پر مین ان کا شکر گزار ہوں اور اندھے قتل کو منطقی انجام تک پہنچانے کے لیے سٹی پولیس تھانہ ہٹیاں بالا کے ایس ایچ او انصر سجاد خان،اے ایس آئی چوہدری بشیر،اور ان کے ساتھی کانسٹیبلان نے کارہاے نمایاں سر انجام دیے خود کشی قرار پانے والی خاتون کا قتل بر آمد کر لیا ایس ایچ اور اور ان کے ساتھیوں کو احسن کارکردگی سرٹیفکیٹ ڈی آئی جی مظفر آباد ریجن دیں گے نشاندہی کرنے والے صحافی مبارک حسین اعوان کو پولیس کی طرف سے تعاریفی سند دیں گے جبکہ اندھے قتل کو برآمد کرنے والے پولیس آفیسران اور نوجوانوں کے اقدمات کو عوام نے شاندار الفاظ میں سراہا اور خرج تحسین پیش کیا۔۔۔۔

Avatar

By ajazmir