Thu. Apr 15th, 2021
500 Views

ہٹیاں بالا(بیورورپورٹ)یونین کونسل گوجر بانڈی کے نواحی علاقے تلی کوٹ کی مغل برادری کی گاڑی آتشزدگی واقعہ اور چند ماہ قبل ان کے گھروں میں ایک کروڑ سے زائد کی چوریاں اور توڑ پھوڑ پر متاثرین کوانصاف کی عدم فراہمی کے باعث خرم اقبال مغل کاایس پی آفس ہٹیاں بالا کے سامنے خودسوزی کا اعلان انتظامیہ کی جانب سے متاثرین کے ساتھ کامیاب مذاکرات مہلت لے لی گئی۔تفصیلات کے مطابق چناری کے نواحی علاقے تلی کوٹ کے رہائشی خرم اقبال مغل نے پولیس اور انتظامیہ کے جانبدارانہ رویہ کے خلاف بدھ کے روز ایس پی آفس ہٹیاں بالا کے سامنے خودسوزی کا اعلان کر رکھا تھا خرم اقبال مغل جیسے ہی اپنے خاندان کے دیگر افراد کے ہمراہ خودسوزی کے لیے ایس پی آفس ہٹیاں بالا پہنچے تو ایس پی اپنے آفس میں موجود نہیں تھے پی ڈی ایس پی بشیر احمد،سی آئی اے انچارج واجد علوی،ایس ایچ او سٹی راجہ عنصر سجاد اور پی آئی جاوید چوہان نے معہ نفری مغل برادری سے تعلق رکھنے والے افراد کو سنگین اقدام کرنے سے روکتے ہوئے انھیں دفتر لے جاکر ان سے مذاکرات شروع کر دیے جس میں مغل برادری سے تعلق رکھنے والے خرم اقبال مغل،جاوید اکبر مغل اوردیگرافراد کا کہنا تھا کہ جس طرح ہمارا نقصان ہوتے ہوئے بھی ایس پی اور دیگر پولیس ذمہ داران نے خرم اقبال سے تسلی کے لیے قرآن پر حلف کروایا اسی طرح کیانی برادری سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے بھی حلف کروانا چاہیے تھا اگر پولیس ان سے حلف نہیں کرواتی تو لاکھوں روپے گاڑی کی آتشزدگی میں ملوث افراد کوایک ہفتہ بعد بھی منظر عام پر کیوں نہیں لایا گیا اس کے علاوہ ایس پی ہٹیاں بالا کے پاس ان چوروں کے فنگر پرنٹ نادرا نے کئی ماہ قبل بھیج دیے تھے جنہوں نے ہمارے گھروں میں چوریاں کیں لیکن پولیس نے نہ تو انکے خلاف آج تک کوئی مقدمہ درج کیا اور نہ ہی کوئی اور قانونی کارروائی کی گئی آخر انتظامیہ کا دوہرا معیار کب تک جاری رہے گا ہمیشہ ہمارے ہی خلاف انتقامی کارروائیاں کی جاتی ہیں پولیس نے کیانی برادری کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے مغل برادری کے اس موقف کے بعد پولیس آفیسران نے انھیں یقین دہانی کروائی کہ انھیں جلد انصاف ملے گا خودسوزی کا اقدام کرنے سے گریز کیا جائے انتظامیہ کی یقین دہانی کے بعد خرم اقبال مغل نے خودسوزی کو موخر کرتے ہوئے کہا اگر اب بھی ہمیں انصاف نہ ملا تو ہم کسی اور مقام پر جا کر سخت ترین احتجاج سے گریز نہیں کریں گے پھر انتظامیہ کا ہمارے اوپر کوئی گلہ نہیں ہونا چاہیے لیکن اب ہم خاموش نہیں رہیں گے ہر صورت میں انصاف لیکر رہیں گے یاد رہے کہ گذشتہ سال مئی میں تلی کے مقام پر سابق مشیر حکومت محمد خان کیانی کے بیٹے شاہ نواز کیانی قتل کیس کے بعد مغل اور کیانی فیملیوں کے درمیان کشیدگی چلی آ رہی ہے آئے روز کوئی نہ کوئی واقعہ رونما ہونے کے باعث دونوں برادریوں کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوجاتا ہے بدقسمتی سے انتظامیہ اور پولیس اس معاملہ کا مکمل حل نکالنے میں آج تک بری طرح ناکام ہو چکی ہے اگر اب بھی انتظامیہ نے کوئی ٹھوس اقدامات نہ اٹھائے تو مستقبل میں مزید بڑا سانحہ رونما ہونے کا خطرہ ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Avatar

By ajazmir