Thu. Apr 15th, 2021
257 Views
……….. صاحبزادہ اسحاق ظفر تم کرپٹ تھے……………..
…………..!……………!…………
تحریر۔معراج عالم
  آج میرے ایک بہت پیارے دوست نے کہا کہ اسحاق ظفر نے اپنے حلقہ میں نا انصافی اور کرپشن کو عروج دیا.. ایسی حقیقت سن کر دل باغ باغ ہو گیا.
میرا دوست غلط ہو ہی نہیں سکتا. اس نے سچ کہا… اسحاق ظفر تم واقعی ایک کرپٹ انسان تھے…..
میرا دل چاہ رہا ہے کہ بتاوں کہ تم نے کیا کرپشن کی…
تم تھے ہی کر پٹ…
تم نے ساری زندگی اقتدار دیکھا.. لیکن موت تمہاری کچے مکان میں ہوئی . کیونکہ کوئی اور رہائش تھی ہی نہیں…جائیدادہی بنا جاتے کچھ… مگر نہیں..
تم نے اپنی  اولاد اور اپنے خاندان کے لیے نہ ہٹیاں، نہ مظفرآباد، نہ اسلام آباد میں ایک مرلہ کا پلاٹ لیا.. کرپٹ انسان..
تم کرپٹ نہ ہوتے تو اپنے خاندان کے تعلیم یافتہ لوگوں کو اعلیٰ عہدوں پر تو فائز تو کر ہی سکتے تھے.
تم نے ظلم کیا کہ تم نے اپنی اولاد اور خاندان کو قبضہ مافیہ نہ بنایا.. کیونکہ تم خود کرپٹ تھے..
کتنے نا سمجھ اور نالائق تھے کی 8 اکتوبر 2005 کہ زلزلے کے بعد تمہیں زرداری اور فریال تالپور نے تمہارے خاندان کہ لیے اسمبلی لاجز کی چابیاں اور سینکڑوں کنال اراضی کی پیشکش کی مگر تم کرپٹ انسان.. تم نے وہ لینے سے انکار کیا اور کہا کہ میرا خاندان پورا کشمیر ہے..
زلزلہ ہو یاکنٹرول لاین پر تبا ہ کاری… تم ہمیشہ آگے تھے… میں نہیں بھول سکتا کی تم نے بیٹی کی شادی روک کر سارا کھانا اور کپڑے متاثرین کو بانٹے…. کرپٹ انسان…
تم و لی اللہ کی اولاد تھے.. تم جانتے تھے کہ اب تمہارا سفر آ خرت ہے… اسی لیے سارے لوگوں کو گواہ بنا کر کہا کہ ” گواہ رہو میرے ہاتھ صاف ہیں ”
مگر     تم کرپٹ تھے..
تم نے بھی رائج کردہ اور اپناے ہوئے اصولوں اور ضوابط کی پاسداری کی ہوتی.. تو.. پھر…….پر… کاش.. تم.. کرپٹ نہ ہوتے
Avatar

By ajazmir