Mon. Jan 18th, 2021
123 Views

ہٹیاں بالا(بیورورپورٹ)فاروق حیدرمکتب معلمین کے ساتھ بھی وعدہ وفا نہ کرسکے۔ساڑھے چار سال گزرنے کے باوجود دس سے پندرہ سال تک خدمات سرانجام دینے والوں کو نکال دیا گیا تھا فاروق حیدر نے متاثرین کی ہڑتال میں خطاب کرتےہوئے کہا تھا پیپلزہارٹی کو قرآن کی خدمت گاروں کی سزا ملے گئی متاثرین معلم القران ہٹیاں بالانے ڈسٹرکٹ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے قاری عتیق الرحمن صدر مکتب معلمین جہلم ویلی نے ہمراہ    قاری ساجد ۔قاری جمیل ترابی قاری سجاد الرحمن ۔قاری لیاقت قاری سخاوت ۔قاری انصار ۔قاری نصیر اور قاری شفیق الرحمن  نے کہا کہ وزیراعظم راجہ فاروق حیدرخان نے کئی مرتبہ وعدے کیئے اپنے دور اپوزیشن میں انہوں نے متاثرین معلم القران کے حق میں دھرنا بھی دیا لیکن تمام ہمدردیوں اوروعدوں کے باجود نہ صرف ہٹیاں بالا بلکہ آزادکشمیر بھر کے470سے زائد متاثرہ معلم القران گورنمنٹ پرائمری ادارہ جات میں بلاتنخواہ کام کررہے ہیں ہرحکومت کا وعدہ رہا کہ ہم متا ثرین معلم القران کو بحال کریں گے لیکن اس امید پر ہماری امیدیں بیت گئی بلاتنخواہ ڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں ہمارے بچے بھوک وپیاس سے بلک رہے ہیں اور فاقہ کشی کی نوبت ہے مگرافسوس ہے کہ کسی حکومت نے ہمارے ساتھ اچھا سلوک نہیں کیا وزیراعظم نےپہلے بجٹ میں وعدہ کیا تھا کہ وہ ان کو بحال کریں گے لیکن چوتھا بجٹ بھی گزر گیا مگر متاثرین معلم القران آج بھی دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں وہ وعدہ پورا کریں  مکتب   معلمین   نے کہا کہ  ڈپٹی کمشنر کو نوٹس دے دیا ہے اکیس جنوری 2021 تک ہمارا مطالبہ پورا نہ ہوا تو وزیراعظم  سیکرٹریٹ  کے سامنے احتجاج کریں گئے اگر وزیراعظم  نے ہماری بحالی کا مطالبہ پورا کردیا تو آئندہ الیکشن میں بھاری اکثریت سے کامیاب کرائیں گئے۔وگرنہ جو بدعائیں انہوں نے پیپلزہارٹی والوں کو دی تھیں کہیں ان بدعاؤں کا اثر ان کو نہ ہوجائے اور حکومتی سفینہ ڈوب جائے

Avatar

By ajazmir