285 Views

تحریر عمر سید کاظمی
ضلع جہلم ویلی میں پاکستان پیپلز پارٹی اور تحرک انصاف کی الیکشن مہم منعظم انداز میں تیزی سے جاری ایک جانب ڈور ٹو پیپلز پارٹی الیکشن مہم جاری کیئے ھوۓ تو دوسری جانب پی ٹی آئی کے ورکرز گاؤں گاؤں پھیلے نظر آتے ھیں جبکہ حکمران جماعت کے کارکنان اپنی حکومت پر کارکن کش پالیسیوں کا الزام لگا کر جماعت سے نالاں نظر آتے ھیں جس کا فائدہ اپوزیشن جماعتیں لینے کی بھرپور کوشش کرتی نظر آتی ھیں مگر چند مرعات یافتہ لیگی کارکن جو حکومت کو سب اچھا تاثر دینے بات کرتے ھیں وہ بھی بس پردہ حکومت کی پالیسوں کے خلاف نظر آتے ھیں حکمران جماعت کو ضلع جہلم ویلی میں 5 سے 7 افراد نے یر غمال بنا رکھا ھے جس کی وجہ سے لیگی سیاسی نظام بہت بگڑا چکا ھے کچھ لوگ حکومتی فنڈز حکومت ھی کے خلاف استعمال کرتے نظر آتے ھیں عام الیکشن کو ایک سال سے بھی کم عرصہ رہ گیا ھے مگر حکومت اپنی خراب پالیسیوں کے کے باعث کارکنوں کو اپنے آپ سے دور کرتی نظر آرھی ھے جس کی سے ضلع جہلم ویلی میں خصوصا حلقہ پانچ کے اندر کارکنوں اور لیڈر شپ کے درمیان فاصلوں کی ایک خلیج نظر آتی دوسری جانب وزیر اعظم سے ملنے جانے والے کارکن وزیر اعظم سیکٹریٹ اور وزیر اعظم ھاؤس کے سامنے ان کے عملہ کے ھاتھوں زلیل ھوتے نظر آتے ھیں وھاں بھی مخصوص برادری کی مخصوص لابی کی چھاپ ھے کارکنوں کی عزت نفس کے دعویدار اب خود کارکنوں کو ایک آنکھ دیکھنا نہیں چاہنے کارکنوں کے مسائل کا حل تو دور کی بات ھے ان کو ھاؤس اور سیکٹریرٹ کے سامنے دیکھ کر آگ بگولہ ھو جاتے ھیں اور پھر ان کی تزلیل کر کے واپس لوٹا دیتے ھیں مسائل میں روز بروز اضافہ ھو رھا ھے الیکشن میں جانی مالی قربانیاں دینے والے اپنی جائیدایں فروخت کر کے پارٹی کے لئے کام کرنے والے آج مفلوک الحالی کا شکار ھیں فصلی بٹیرے مفاد اٹھا رھے ھیں الیکشن میں جناب وزیر اعظم انصاف مبنی معاشرے کے قیام بہت باتیں کرتے تھے مگر انصاف ھوتا نظر نہیں آتا حلقہ پانچ میں گجر اور سادات برادری بہت بڑا ووٹ بنک ھے اور جناب وزیر اعظم کی کامیابی بھی ان دو بڑی برادریوں کے باعث ھوئی مگر اقتدار پر برجمان ھونے کے بعد ان دو بڑی برادریوں کو کھڈلائن لگا دیا گیا ایسے ایسے لوگوں کو صوبدیدیں پوسٹوں پر تیعنات کیا گیا جن پارٹی میں کوئی کردار ھی نہیں نظر آیا جو الیکشن کے دوران شاہد اپنا ووٹ بھی کاسٹ نہ کر سکے آج وہ مرعات میں سب سے آگے ھیں اور جانثار کارکنوں کے لئے وزیر اعظم تک رسائی ھی ممکن نہیں کیا یہ صلہ ھے کارکنوں کی محنت کا کیا یہ عزت ھے کارکنوں کی آج تک یہ پتہ نہیں چل سکا کہ جناب وزیر اعظم کے حلقہ میی کارکن کس کے ذمہ ھیں ان کی دیکھ بحال کون کرتا ھے

Avatar

By ajazmir