162 Views

تحر یر :۔ عبدالوحید کیانی
میرے پچاس بچے ہوتے تو اسلام ،ملک وملت کےلئے قربان کرنے پڑتے تو میں قربان کردیتی ، مجھے فخر ہے کہ میرا بیٹا لیفٹیننٹ ناصرحسین سلہریا نبی کریمﷺکے اسوہ حسنہ پر عمل کرتے ہوئے ملک وملت کی خدمت کے جذبہ سے سرشار شہادت کے مرتبہ پر فائز ہوگئے ۔یہ موتی جیسے انمول الفاظ مظفرآباد سے تعلق رکھنے والی لیفٹیننٹ ناصرحسین شہید کی عظیم اورقابل فخر ماں کے ہیں جنہوں نے 24سال کی عمر میں اپنے خاوند کی شہادت کے بعد 4معصوم بچوں کی بہترین تعلیم وتربیت کے لیے قربانی کی داستان رقم کرتے ہوئے شہید بیٹے کی ماں کا اعزاز بھی نام کرلیا ،شہیدبیٹے کی کہانی اور وہ بھی ایک ماں کی زبانی۔ غم ‘ دکھ ‘ رنج اور محرومی۔ ہمت ‘ حوصلہ ‘ صبراور استقامت۔ اعتماد ‘ یقین ‘ فخر اور انکسار۔اتنے رنگ قوسِ قزح میں نہیںجتنے رنگ ماں نے بکھیر دیے۔ماں کو ہر دن‘ ہر لمحہ یاد،جب بیٹے کا جنم ہوا ،جب پروان چڑھا ،اورہمیشہ کےلئے جدا ہوگیا ۔پولیس آفیسر خاوند کی شہادت کی جدائی کا غم اورآٹھ اکتوبر 2005ءکے تباہ کُن زلزلہ میں قدرت نے رنجیدہ ماں کو نئے امتحان میں ڈالا دونوں بھائی دوران تعلیم سکول میں ملبے تلے دب گئے ،ناصرحسین سلہریا زخمی بھی ہوئے مگر اس دکھیاری ماں نے خالق کائنات کے ساتھ قرآن کریم کی تلاوت اورنماز کے ذریعے اپنا تعلق مضبوط کرتے ہوئے معصوم بچوں کی پرورش اورتربیت کےلئے اپنے آپ کو وقف کیا ۔ قدرت نے انعام کے طور پر دونوں بھائیوں کیلئے علم وحکمت کے دروازے کھولتے ہوئے پاک فوج کے امتیازی عہدوں پر پہنچا دیا ۔وزیرستان میں دہشت گردوں کی کاروائی کاشکارہو کر ساتھیوں سمیت شہید ہونے والے 23سالہ لیفٹیننٹ ناصرحسین شہید کی والدہ نے بیٹے کی خوشیوں کے جوارمان پالے تھے وہ دل ہی میں رہے اورجن پھولوں نے سہرے پر سجنا تھا وہ لحد پر سج گئے،جرات ،بہادری ،عزم وہمت کی پیکر ناصرحسین کی والدہ محترمہ کی 24سالوں میں پولیس آفیسر خاوند کی شہادت سے شروع ہونے والی زندگی اللہ پاک پر کامل ایمان قرآن کریم کے ساتھ تعلق صبر واستقامت نے انہیں دورحاضر میں نہ صرف امت مسلمہ کی ماﺅں بلکہ نئی نسل کےلئے بھی مشعل راہ بنا دیا ،کہ تمام حالا ت اللہ تعالیٰ کے قبضہ میں ہیں جس پر توکل کرتے ہوئے اس سے مدد مانگ کر حالات کا رخ موڑا جا سکتا ہے ،23سالہ لیفٹیننٹ ناصرحسین شہید کے چھوٹے بھائی بھی پاک فوج میں ملک وملت کی خدمت کررہے ہیں ،کلمہ طیبہ کی بنیاد پر معرض وجود میں آنے والے ایٹمی توانائی کے حامل امت مسلمہ کے پہلے ملک پاکستان کو قیام سے یہی اندرونی بیرونی سازشوں کے علاوہ ہندومکار پڑوسی ہندوستان ملا جو مقبوضہ کشمیر سے لیکر ہندوستان کے اندرواقع مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کرنے کے ساتھ سیزفائرلائن سے ورکنگ باونڈری اورمملکت خداداد پاکستان میں دہشت گردی کے ذریعے اس کی خود مختاری اورسالمیت کو نقصان پہنچانے کی کوششوں میں مصروف عمل ہے ،سبز ہلالی پرچم کے سائے تلے پاک فوج کے جوان پاکستانی قوم کے پشتی بانی میں دشمن کے عزائم کو خاک میں ملانے کےلئے اپنا تازہ تازہ گرم لہودے کر پاکستان کی سلامتی پر قربان ہورہے ہیں 1947ءسے قربانیوں اورشہادتوں کاتسلسل جاری ہے ،کرنل حق نواز کیانی فاتح لیپہ دومرتبہ ستارہ جرات سے لیکر ر اشد منہاس شہید ،میجر عزیز بھٹی شہید ،کیپٹن سرور شہید ،لالک جان شہید ،سمیت لاکھوں شہدائے اسلام امت مسلمہ کا قابل فخر سرمایہ اوران قربانیوں کے تسلسل اورشہادتوں کے سفرکو لیفٹیننٹ ناصر حسین سلہریا شہید کی والدہ محترمہ
نے نئی روح پھونک دی کے اسلام اوروطن کےلئے 50بیٹے ہوتے تو قربان کردیتی ۔ملک وملت کی نظریاتی وجغرافیائی سرحدوں کی حفاظت پر مامور بیٹیوں کی ان عظیم ماﺅں کو پوری امت مسلمہ کا سلام جب تک امت مسلمہ میں ایسی مائیں اپنے لخت جگر حضور نبی کریمﷺکے احکامات کی پیروی میں تیار کرکے روانہ کرتی رہیں گی تب ہی کوئی دشمن پاکستان کو نقصان پہنچانے میں کامیاب نہیں ہوسکے گا،انشاءاللہ ۔

Avatar

By ajazmir