143 Views

بھارت ميں کووڈ انیس کے کيسز ميں مسلسل اضافہ نوٹ کيا جا رہا ہے۔ پچھلے چوبيس گھنٹوں کے دوران 90,632 نئے کيسز سامنے آئے ہیں۔ یہ اعدادوشمار دنيا کے کسی بھی ملک ميں ايک دن ميں ريکارڈ کيے جانے والے سب سے زيادہ کيسز ہيں۔ بھارت ميں کيسز اگر اسی رفتار سے بڑھے تو امکان ہے کہ پير تک بھارت دنیا میں امریکا کے بعد کورونا سے متاثرہ دوسرا بڑا ملک بن جائے۔ ابھی تک امريکا کے بعد برازيل  کووڈ انیس سے سب سے زیادہ متاثر ملک ہے۔

بھارت ميں کيسز کی مجموعی تعداد چار اعشاريہ ايک ملين سے زائد ہو گئی ہے جبکہ ساڑھے ستر ہزار سے زيادہ افراد اس مہلک مرض کی وجہ سے جان کی بازی ہار چکے ہيں۔ اس صورتحال کے پیش نظر جرمنی نے بھارت کے لیے ایک بڑے امدادی پیکج کا اعلان کیا ہے، جس کے تحت جرمنی بھارت کو330000 ٹیسٹنگ کٹس اور 460 ملین یورو کے قرضے دے رہا ہے۔ جرمنی کے وزیر ترقیات گیرڈ میولر نے کہا کہ جرمنی بھارت کو جو طبی سامان دے گا اس میں تین لاکھ تیس ہزار ٹیسٹنگ کٹس اور چھ لاکھ حفاظتی لباس یا ‘پرسنل پروٹیکٹیو ایکوپمنٹ‘ شامل ہیں۔ اس سامان کی لاگت 15 ملین یورو ہے۔ اس کے علاوہ بھارت کو 460 ملین یورو کے قلیل مدتی قرضے بھی فراہم کیے جائیں گے۔ جرمن وزیر کے مطابق اس امداد کا مقصد کورونا کے معاشی نقصانات کے غریب لوگوں پر اثرات کم کرنا ہے۔ جرمن حکام کے مطابق یہ امداد غریب لوگوں میں خوراک کی تقسیم اور اور بے روزگار ہوجانے والےکی مدد کے لیے ہوگی۔

Avatar

By ajazmir