490 Views

ہٹیاں بالا(نامہ نگار) ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ ہٹیاں بالا میں زیر سماعت مقدمہ کے دوران چناری کے رہائشی شخص نے خود کو آگ لگا کر خودکشی کرنے کی کوشش کی جسے ڈیوٹی پر تعینات پولیس اہلکاران نے ناکام بناتے ہوئے محمد رشید ولد غلام ربانی ساکن سڑک چناری کو اپنی تحویل میں لے لیا اور پولیس کی نگرانی میں ہسپتال پہنچایا۔



تفصیلات کے مطابق ہفتہ کے دن ڈسٹرکٹ اینڈ سشن کورٹ میں ایک ملزم اجمل بنام سرکار کی عبوری ضمانت کی کاروائی جاری تھی کہ چناری کے رہائشی شخص رشید ولد غلام ربانی کورٹ میں داخل ہوا اور آخری رو میں جا بیٹھا ضابطے کی کاروائی جاری تھی کہ رشید نامی شخص نے شور شرابہ کرتے ہوئے جیب سے بوتل نکالی اور بوتل میں موجود مواد کو اپنے اوپر چھڑکاﺅ شروع کردیا اور جیب سے لائٹر نکال کر خود کو آگ لگانے کی کوشش کی جس پر ڈیوٹی پر تعینات پولیس اہلکاران محمد اسلم اور رزال نے رشید کو پکڑ لیا اور آگ سے بچا لیا رشید کو ہسپتال لے جایا گیا بعدازاں دوران سماعت کورٹ میں بلاجواز داخلے اور خودکشی کی کوشش کرنے پر رشید ولد غلام ربانی پر ایف آئی آر کی تحریک کی گئی ہے یاد رہے کہ رشید نامی شخص کے بھتیجے راجہ فہیم نے راجہ رشید پر جعل سازی کا مقدمہ درج کرارکھا ہے بقول چناری پولیس راجہ فہیم نے بھی پولیس کے سامنے خودکشی کا ڈرامہ رچایا اور سر شیشے پر مار کر خود کو زخمی کیا اور الزام پولیس پر لگایا راجہ فہیم کے چچا رشید نامی شخص کو جعل سازی کے جرم میں گرفتار بھی کیا گیا تھا جسے ضمانت پر رہائی ملی تھی آج ڈسٹرکٹ کورٹ میں معزز جوڈیشنری آفیسران کے سامنے خودکشی کی کوشش کی جس پر اس کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے راجہ فہیم اور ان کے چا چا نے ایک دوسرے پر متعدد مقدمات دائر کر رکھے ہیں اس تنازعہ کے باعث دونوں گروپوں کے درمیان کشیدگی بھی پائی جاتی ہے راجہ رشید کا موقف ہے کہ ان کا بھتیجا انھیں بلاوجہ تنگ کر رہا ہے جبکہ راجہ فہیم راجہ رشید پر الزامات لگا رہا ہے چند ہفتے قبل پی آئی آفس میں مبینہ طور پر زخمی ہونے والے راجہ فہیم نے پولیس پر الزام عائد کیا تھا کہ پولیس نے اسے تشدد کر کے زخمی کیا جبکہ پولیس کا موقف تھا کہ راجہ فہیم نے خودکشی کی کوشش کی اس واقعہ کے بعد چکار اور چناری میں راجہ فہیم کے حامیوں نےمتعدد مرتبہ مظاہرے بھی کیےتھے

Avatar

By ajazmir