ہندوستان نے کشمیر پر 5 اگست کا فیصلہ طے شدہ منصوبہ بندی کے تحت کیا۔وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان، چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی

115 Views

مظفرآباد ( پی آئی ڈی )02 اگست2020ئ
وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا ہے کہ ہندوستان نے کشمیر پر 5 اگست کا فیصلہ طے شدہ منصوبہ بندی کے تحت کیا ۔ کشمیر پر سفارتی اور قومی سطح پر بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے ۔آزادکشمیر اور حریت قیادت نے اپنی مشترکہ سفارشات وزارت خارجہ کو دیدی ہیں۔کشمیر کے معاملے پر جارحانہ سفارتی پالیسی کی ضرورت ہے۔ مودی نے ہندوستان کو انتہا پسندی کی انتہا تک پہنچا دیا ہے۔ ہندوستان میں اصل اختیار 5 فیصد برہمن کے پاس ہے تمام وسائل ان کے کنٹرول میں ہے۔کورونا وائرس کے بعد دنیا کی ترجیحات تبدیل ہو گئی ہیں کشمیر پہلے پہلے نمبر پر تھا۔ ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم آزادکشمیر نے عید الاضحی کے روز چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفرید ی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر کشمیر کمیٹی کے ممبران بیرسٹر محمد علی سیف ، محمد اکرم چیمہ ، محترمہ نورین ابراہیم، محترمہ عاصمہ قدیر، محترمہ عظمیٰ ریاض ، محترمہ ثوبیہ کمال بھی چیئرمین کشمیر کمیٹی کے ہمراہ تھے۔ اس موقع پر حریت رہنما سید فیض احمد نقشبندی، اشتیاق حمید، عبدالمجید میر، زاہد صفی، اعجاز شاہ اور مشتاق السلام بھی موجود تھے ۔ پریس کانفرنس میں آزادجموں وکشمیر کے وزیر آئی ٹی ڈاکٹر مصطفی بشیر، سابق وزراءحکومت خواجہ فاروق احمد، دیوان علی خان، حریت رہنما، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنرل فرحت علی میر ، ڈائریکٹر جنرل اطلاعات راجہ اظہر اقبال بھی موجود تھے ۔ وزیرا عظم آزادجموں وکشمیر نے کہاکہ کورونا کے باعث اقتصادی ترقی متاثر ہوئی دنیا بدل گئی ہے ۔کشمیر پر پاکستان میں سیاسی یکجہتی کو عملی شکل دینے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی جغرافیائی حدود نے پھیلنا ہے کشمیر نے اس کا حصہ بننا ہے۔ہندوستان کے عزائم پاکستان کے خلاف ہیں ۔کشمیر کمیٹی کو زیادہ سے زیادہ فعال کرنے کی ضرورت ہے ۔پاکستان کو دنیا کی کوئی طاقت بائی پاس نہیں کر سکتی۔ وزیر اعظم نے اس موقع پر چیئرمین کشمیر کمیٹی اور کمیٹی ممبران کا عید الاضحی کے موقع پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرنے پر شکریہ ادا کیا۔
مظفرآباد ( پی آئی ڈی )02 اگست2020ئ
چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی نے کہاہے کہ نریندر مودی صرف مسلمانوں کا نہیں بلکہ پوری انسانیت کا دشمن ہے ۔ کشمیر کے معاملے پر ہم سب کا ایک موقف ہے کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد کروایا جائے ۔ حریت رہنماءہماری عزت ہیں ۔پاکستان میںکشمیریوں پر کوئی سودے بازی نہیں کرسکتا۔ مقبوضہ جموں وکشمیر میں بہادری اور شجاعت کے ساتھ قربانیو ں کی لازوال داستان رقم کرنے والوں کو سلام پیش کرتا ہوں ۔کشمیر پاکستان اور ہندوستان کے درمیان دوطرفہ معاملہ نہیں ،اس پر اقوام متحدہ کی قراردادیں موجود ہیں ۔ ہم کشمیریوں کی آواز بنیں گے اور کشمیریوں کا مقدمہ دنیا کے ہر فورم پر لیکر جائیں گے ۔وزیر اعظم آزادکشمیر اورکشمیری ڈائسپورہ کے ساتھ ملکر لائحہ عمل بنائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کے ہمراہ عید الاضحی کے روز ایوان وزیر اعظم مظفرآباد میں آل پارٹیز حریت کانفرنس کے وفد سے ملاقات کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ بیرسٹر محمد علی سیف ، محمد اکرم چیمہ ، محترمہ نورین ابراہیم، محترمہ عاصمہ قدیر، محترمہ عظمیٰ ریاض ، محترمہ ثوبیہ کمال بھی چیئرمین کشمیر کمیٹی کے ہمراہ تھے جبکہ اس موقع پر حریت رہنما سید فیض احمد نقشبندی، اشتیاق حمید، عبدالمجید میر، زاہد صفی، اعجاز شاہ اور مشتاق السلام بھی موجود تھے ۔ شہریار آفریدی نے کہاکہ کشمیرکی مائیں اپنے بیٹیوں ، بہنیں بھائیوںاور والد اپنے بچوں کےلئے تڑ پ رہے ہیں ۔ آسیہ اندرابی، یاسین ملک ، شبیر شاہ اور دیگر حریت رہنماءہندوستان کی قید میں ہیں ۔ ابوالقاسم 28سال سے جیل میںہیں ۔ ہندوستان میڈیا اور سوشل میڈیا کے ذریعے پروپیگنڈا کررہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہندوستانی پروپیگنڈے کا موثر جواب دینگے اوریوتھ اور پاکستانی و کشمیری ڈائسپورہ کو شامل کرینگے ۔ اپنے بیانیے کے ذریعے ہندوستان کا اصل چہرہ دنیا کے سامنے لائیں گے۔انہوںنے کہاکہ ہندوستان اسرائیلی طرز پر مقبوضہ کشمیر کی ڈیمو گرافی تبدیل کررہا ہے ۔ہندوستان مقبوضہ کشمیر کے ڈومیسائل کے قوانین میں تبدیلی کر کے اقوام متحدہ کی قراردادوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی کررہا ہے ۔ ہندوستان کا ہر فورم پر مقابلہ کرینگے ۔ شہریت اور ڈومیسائل کے قوانین میں تبدیلی آر ایس ایس کی آئیڈیالوجی ہے ۔ شہریار آفریدی نے کہاکہ کشمیریوں کے ساتھ پاکستان کی کمٹمنٹ ہے اس پر کسی قسم کے سمجھوتے کا سوچ بھی نہیں سکتے ۔ کشمیریوں کی تکلیف میں پاکستان برابر کا شریک ہے۔عمران خان کی پالیسیوں کی وجہ سے ہندوستان بین الاقوامی سطح پر Exposeہورہا ہے