تاجر موت کے سوداگر ہیں اور ایس او پی کی خلاف ورزی کر کے موت بانٹ رہے ہیں جسکی وجہ سے کرونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے میں دوبارہ مکمل لاک ڈاؤن کر رہا ہوں۔وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی سینئر صحافی عبدالوحید کیانی سے گفتگو

415 Views

تاجر موت کے سوداگر ہیں اور ایس او پی کی خلاف ورزی کر کے موت بانٹ رہے ہیں جسکی وجہ سے کرونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے میں دوبارہ مکمل لاک ڈاؤن کر رہا ہوں۔ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے گیلانی چوک مظفرآباد میں پیدل چلتے ہوئے سینئر صحافی عبدالوحید کیانی کو دیکھ کر اپنا پروٹوکول سکواڈ کو روک کر ان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔فاروق حیدر نے کہا کہ میرے پاس اس کے علاوہ کوئی چارہ کار نہیں ہے اس موقعہ پر سینئر صحافی عبدالوحید کیانی نے کہا کہ آپ وقت کے حکمران ہیں اللہ کی مدد حاصل کرنے کے لیے اللہ کی طرف رجوع کریں اور عوام کی سلامتی کے لیے دعائیں مانگھیں اور عوام کی مشکلات کو مدنظر رکھتے ہوئے ان کے لیے اپنا دل نرم رکھیں اس پر وزیر اعظم نے کہا کہ ماہرین کی جانب سے کرونا وائرس سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر اختیار کرنا ہر شہری کے ذمہ ہے اگر وہ احتیاطی تدابیر اختیار نہیں کریں گے تو حکومت بے بس ہو کر اسے عوام کے تحفظ کے لئے سخت فیصلے کرنا ہوں گے
مظفرآباد (پی آئی ڈی )10 جون2020وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا ہے کہ کرونا سے بچاﺅ کےلئے حفاظتی تدابیر پر عمل کرنا ہر شہری کا فرض ہے ۔جتنی احتیاط کریں گے اتنا ہی محفوظ رہیں گے۔پڑھے لکھے طبقے کی ذمہ داری ہے کہ کرونا سے بچاﺅ کےلئے شعور اجاگر کریں ۔ عوام اگر تعاون نہیں کرینگے تو حکومت کو سخت فیصلے کرنا پڑیں گے۔ہمیں کرونا سے بچاﺅ کرتے ہوئے زندہ رہنا سیکھنا ہے ۔ کرونا کا ابھی تک کوئی علاج دریافت نہیں ہوا، اگر شہریوں نے سنجیدگی نہ دکھائی تو اس وباءکو کنٹرول کرنا بہت مشکل ہو جائے گا۔حکومت آزاد کشمیر نے محدود وسائل کے باوجوداس کے پھیلاﺅ کو روکنے کےلئے اقدامات اٹھائے لیکن لاک ڈاﺅن میں نرمی کے بعد عوام کی جانب سے بے احتیاطی کی گئی جس کی وجہ سے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہوا۔اپنے ایک بیان میں وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر نے کہا کہ موجودہ حالات میں سب کو احتیاط اورذمہ داری کامظاہرہ کرناہوگا- عوام سے ایک بار پھر اپیل ہے کہ وہ حفاظتی ایس او پی پر عمل کریں – حکومت آزادجموں وکشمیر نے محدود وسائل کے باوجود بروقت لاک ڈاﺅن کا فیصلہ کیا جس کی وجہ سے کرونا کا پھیلاﺅ کنٹرول میں رہا ۔ لاک ڈاﺅن کے دوران دہاڑی دار طبقہ کو ریلیف فراہم کرنے کےلئے بھی اقداما ت اٹھائے ۔ دنیا میں کسی ملک کے پاس اتنے وسائل نہیں کہ وہ مسلسل لاک ڈاﺅن کر نظام چلا سکے ۔ عوام کی مشکلات کے پیش نظر لاک ڈاﺅن میں نرمی دی لیکن نرمی کے بعدکرونا کے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہو نا شروع ہو گیا ہے جوکہ انتہائی تشویشناک ہے ۔ عوام اگر حکومتی احکامات کی پاسداری نہیں کرینگے توکرونا وائرس کے پھیلاﺅ کو کنٹرول کرنا بہت مشکل ہو جائے گا۔ انہوںنے کہاکہ گزشتہ چند دنوں میں کرونا کیسز میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے اور صورتحال مشکل ہو سکتی ہے ۔ عوام سماجی رابطوں کو محدود رکھیں سماجی فاصلہ کو ہر صورت یقینی بنائیں۔ ٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭